اپنے پاؤں پر ایلومینیم فوائل لپیٹ دیں اور چند گھنٹوں بعد پائیں ایک نہیں بلکہ 5 حیران کن فوائد

اپنے پاؤں پر ایلومینیم فوائل لپیٹ دیں اور چند گھنٹوں بعد پائیں ایک نہیں بلکہ 5 حیران کن فوائد

یقیناً آپ ایلومینیم ورق (ایلیو مینیم فوائل) سے واقف ہوں گے کیونکہ بہت سے لوگ یہ ورق باورچی خانے میں استعمال کرتے ہیں، لیکن آپ نے کبھی اسے جسم کے حصّوں کو لپیٹنے کے لئے استعمال کرنے کے بارے میں کبھی نہیں سوچا ہوگا، یہ واقعی ایک عجیب معلوم ہوتا ہے، لیکن آپ ایسا واقعی کر سکتے ہیں۔ جی ہاں آج ہم آپ کو ایلومینیم فوائل کا ایسا استعمال بتائیں گے جو جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے مگر ایسا کرنے سے آپ کو بہت سے فوائد حاصل ہوں گے وہ کیا فائدے ہیں یہ ہم آپکو بتاتے ہیں۔ ایلومینیم ورق میں اپنے پیروں کی ریپنگ کریں اور پائیں حیرت انگیز رزلٹ • ایلومینیم ورق کی پانچ سے سات شیٹس اپنے پیروں میں لپیٹیں، انہیں گھنٹے بعد ایک گھنٹے تک رہنے دیں، پھر اپنے پیروں سے تقریبا ایک ورق اتاریں اور پھر اپنے پیروں کو دوبارہ اس میں لپیٹ لیں، اس عمل کو ہر شام دہرائیں، آپ کو پہلے ہی استعمال میں سردی نزلہ کھانسی میں فرق نظر آئے گا۔ • ایلومینیم شیٹ میں اپنے جوڑ لپیٹنا بھی درد سے بچنے میں مدد فراہم کرتا ہے، آپ ورق کو اس کی
جگہ پر رکھنے کے لئے بینڈیج استعمال کر سکتے ہیں، سونے سے پہلے تکلیف والے جوڑ کے گرد ورق کو لپیٹ دیں اور سو جائیں تقریبا 7 راتوں تک ایسا کریں۔ • جب آپ تھکاوٹ کا شکار ہو تو ہماری یہ ٹپ بہت عمدہ ثابت ہو گی اس صورت میں ایلومینیم ورق کی کچھ شیٹس کو فریزر میں دو سے چار گھنٹے کے لئے رکھیں، پھر اسے اپنے چہرے پر رکھیں خاص طور پر اپنے پلکوں اور گالوں پر ایسا کرنے سے آرام ملے گا اور آپ پُرسکون ہو جائیںگے ۔ • پاؤں پر ایلومینیم شیٹ لپیٹنے کا ایک بڑا فائدہ یہ بھی ہے کہ اس سے آپ کے پاؤں کی جِلد نرم و ملائم ہو جائے گی۔ • اس کا سب سے آخری اور سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ ایلومینیم شیٹ ایک قدرتی پیڈی کیور اور مینی کیور
کی طرح کام کرتا ہے آپ اسے پاؤں کے ساتھ ساتھ ہوتھوں پر بھی لپیٹ سکتے ہیں ایسا کرنے سے آپ کے ہاتھ اور پاؤں کی جلد تازہ نرم اور نکھری نکھری ہو جائے گی۔ امید ہے یہ معلومات آپ کے لئے کارآمد ثابت ہوں گی، آپ بھی اگر اس کے مزید کچھ فوائد جانتے ہیں تو ابھی ہماری ویب کے فیس بُک پیج پر اپنی رائے دیجیئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *