داعش نے امریکی آرمی کے ساتھ گٹھ جوڑ کر لیا،امریکی فوجی داعش کے کارندے کو معلومات فراہم کرنے لگے

داعش نے امریکی آرمی کے ساتھ گٹھ جوڑ کر لیا،امریکی فوجی داعش کے کارندے کو معلومات فراہم کرنے لگے

گزشتہ کئی ماہ سے اس قسم کی پیشین گوئیاں کی جا رہی تھیں کہ نائن الیون کی یاد میں ویسا ہی کوئی سانحہ امریکہ کے کسی بھی بڑے شہر میں واقع ہو سکتا ہے مگر و ہ سارا وقت گزر گیااور ایسا کوئی واقعہ پیش نہیں آ سکا . تاہم اب کئی ماہ بعد جارجیا سے امریکن فورسز نے اپنی ہی آرمی کا ایک نوجوان گرفتار کر کے عدالت میں پیش کر دیا ہے کہ جس سے متعلق یہ دعویٰ کیا جا رہ اہے کہ اس نے داعش کے ایک نوجوان کو نیویارک لانےا ور اسے دہشت گردی کی تربیت دینے میں کردار ادا کیا .

اس نوجوان اہلکار پر یہ بھی الزام عائد کیا گیا کہ اس نے داعش کے کارندے کو وہ ساری معلومات مہیا کیں کہ کس طرح امریکی آرمی کو ٹریننگ دی جاتی ہےا رو دہشت گردوں سے نمٹنے کے لیے کون سے فارمولے اپنائے جاتے ہیں تاکہ وہ کارندہ یہ معلومات داعش کو پہنچائےا رو داعش امریکی آرمی سے نبردآزما ہونے کے لیے بہتر پوزیشن میں آ سکے. کولے بریجج جو کہ بیس سال کا ہے یہ امریکن آرمی میں سپاہ کے طور پر تعینات ہے اور اس وقت جارجیا میں موجود تھا جب اسے گرفتار کیا گیا.

ایف بی آئی اور امریکی آرمی کے مشترکہ آپریشن میں یہ کارروائی عمل میں لائی گئی ہے اور اس میں دعویٰ کیا گی اہے کہ کئی ماہ سے یہ نوجوان داعش کے کارندے سے رابطے میں تھااور مڈل ایسٹ میں داعش کی کارروائیوں کا بھی حامی تھااور داعش کے ساتھ مل کر واشنگٹن یا پھر نیویارک میں نائن الیون کی یادمیں کوئی بڑا سانحہ بپا کرنا چاہتا تھا.عدالت نے ملزم کو ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیاہے جہاں اس سے مزید پوچھ گچھ کی جائے گی کی داعش کے تخریب کاری کے حوالے سے امریک سے متعلق کیا منصوبے طے پا چکے ہیں. تاہم سب سے اہم اور حیران کن بات یہ ہے کہ داعش امریکی آرمی تک رسائی حاصل کر چکی ہے ار سوال یہ پیدا ہواتا ہے کہ اگر داعش نے امریکہ کے اہلکاروں تک رسائی حاصل کر لی ہے تو پھر امریکہ کا مستقبل کیا ہو گا.

Comments are closed.