دُبئی نے اماراتی اور تارکین افراد کے لیے نئی قرنطینہ پابندیوں کا اعلان کر دیا

دُبئی نے اماراتی اور تارکین افراد کے لیے نئی قرنطینہ پابندیوں کا اعلان کر دیا

دُبئی ہیلتھ اتھارٹی (DHA)کی جانب سے تارکین اور مقامی باشندوں کے لیے قرنطینہ سے متعلق نئی پابندیوں کا اعلان ہو گیا ہے . DHA کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ اگر کسی شخص میں کورونا کی تصدیق ہوتی ہے تو جو لوگ اس کے ساتھ رہائش پذیر ہوں گے یاگزشتہ چند روز کے دوران اس سے ملاقات کر چکے ہوں گے، انہیں لازمی طور پر 10 روز کے لیے قرنطینہ میں رہنا ہو گا .

اگر ان متعلقہ افراد کے فوری طور پرلیے گئے کورونا پی سی آر ٹیسٹ کی رپورٹ نیگیٹو بھی آ جائے تب بھی انہیں دس روز لازمی طور پر قرنطینہ میں گزارنے ہوں گے. DHA نے اس حوالے سے جاری کردہ سرکلر میں کہا ہے کہ اگر کسی فرد میں کورونا کی تصدیق ہو جائے تو ان افراد کو فوری طور پراپنا پی سی آر ٹیسٹ کروانا ہو گااور قرنطینہ بھی اختیار کرنا ہو گا.

اس کے علاوہ اس بات کا بھی دھیان رکھنا ہو گا کہ انہیں سانس لینے میں کسی دشواری کا سامنا تو نہیں کرنا پڑ رہا ہے. اگر کورونا کا مریض ٹھیک بھی ہو گیا ہو مگر اس سے رابطے میں رہنے والوں کے لیے اس ٹیسٹ کی پابندی لازمی ہو گی. مندرجہ ذیل افراد پر قرنطینہ کی پابندی لازمی ہو گی. .

وہ افراد جنہوں نے کورونا مریض سے دو میٹر کے فاصلے پر بیٹھ کر 15 منٹ یا اس سے زائد کی ملاقات کی ہو. . کورونا مریض سے گلے ملنے والے یا ہاتھ ملانے والے افراد. ٰ. وہ افراد جنہوں نے کورونا مریض کی دیکھ بھال کے دوران خصوصی طبی ماسک یعنی PPE کا استعمال نہیں کیا. . کورونا مریض کے ساتھ ایک ہی کمرے یا رہائش گاہ میں مقیم افراد.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *