کورونا وائرس کی علامات ظاہر ہوئیں تو آدمی بے تحاشا پانی پینے لگا

کورونا وائرس کی علامات ظاہر ہوئیں تو آدمی بے تحاشا پانی پینے لگا

برطانیہ میں ایک آدمی کو خود میں کورونا وائرس کی علامات کا شبہ ہوا جس پر اس نے بے تحاشا پانی پی کر اس موذی وائرس کا علاج کرنے کی کوشش کی اور موت کے منہ میں جاتے بال بال بچا۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق

برطانوی شہر برسٹل کے رہائشی اس 32سالہ آدمی کا نام لوک بتایا گیا ہے، جس نے کورونا وائرس کی مبینہ علامات ظاہر ہونے پر ڈاکٹروں کی طرف سےپانی کی تجویز کردہ مقدار سے دو گنا زیادہ پانی پینا شروع کر

دیا۔ رپورٹ کے مطابق بہت زیادہ پانی پینے سے اس کے جسم سے نیچرل سوڈیم بہت زیادہ مقدار میں خارج ہو گیا اور اس کی کمی لاحق ہونے سے لوک کی حالت ایسی غیرہوئی کہ وہ ہسپتال کے انتہائی نگہداشت وارڈ تک

جا پہنچا۔اس کی میڈیکل رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ لوک کو ’واٹر انٹوکسی کیشن‘ نامی عارضہ لاحق ہوا، جس کی وجہ سے وہ بے ہوش ہو کر گر گیا۔ خوش قسمتی سے اس وقت اس کی اہلیہ لورا اس کے پاس تھی جس نے

فوری طور پر ایمبولینس بلا لی۔ ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ اگر اسے ہسپتال لانے میں کچھ دیر ہو جاتی تو اس کی جان بھی جا سکتی تھی۔اسے 3دن تک انتہائی نگہداشت وارڈ میں رکھا گیا اور اس دوران وہ وینٹی لیٹر پر بھی

رہا۔تاہم خوش قسمتی سے اس کی جان بچ گئی۔

Comments are closed.