اسرائیل کو تسلیم کرنے کی راہ ہموار کی جا رہی ہے، اندر خانے گیم کیا چل رہی ہے؟پاکستانیوں کو افسوسناک خبر سنا دی گئی

اسرائیل کو تسلیم کرنے کی راہ ہموار کی جا رہی ہے، اندر خانے گیم کیا چل رہی ہے؟پاکستانیوں کو افسوسناک خبر سنا دی گئی

سینئر صحافی و تجزیہ کار عارف حمید بھٹی نے انکشاف کیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کہہ رہے ہیں کہ پاکستان اسرائیل کو تسلیم نہیں کرے گا لیکن جو بحث و مباحثے شروع کیے گیے ہیں۔آنے والے وقتوں میں اسرائیل کو تسلیم کرنے کی راہ ہموار کی جا رہی ہے۔عارف حمید بھٹی کا مزید کہنا ہے کہ میں اسلام آباد گیا تھا، میرے اور ایک صحافی ارشد شریف کی اطلاع کے مطابق معاملات اسرائیل کو

تسلیم کرنے کی طرف لے جائے جا رہے ہیں۔ تسلیم کرتے ہیں یا نہیں کرتے، ہمیں اپنے وزیراعظم پر یقین کرنا چاہئیے انہوں نے کہا میں تسلیم نہیں کروں گا۔ دوسری جانب گذشتہ روز وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پارٹی و حکومتی ترجمانوں کا اجلاس ہوا ۔ وزیراعظم نے اسرائیل کے حوالے

سے گائیڈلائنز دیتے ہوئے کہا کہ اسرائیل کے حوالے سے پاکستان کا واضح موقف ہے۔اجلاس میں رائے دی گئی کہ نوازشریف اور مولانا فضل الرحمان بھی اسرائیل کو تسلیم کرنے کی کوشش کرتے رہے۔

نوازشریف اور مولانا فضل الرحمان کو ہر فورم پر بے نقاب کریں ۔واضح رہے کہ اسرائیلی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنے دور میں دو بار وفد اسرائیل بھیجا جس میں مذہبی رہنما بھی شامل تھے۔تفصیلات کے مطابق اسرائیلی میڈیا نے نواز شریف کی جانب سے اپنے دور میں دو بار وفد اسرائیل بھیجنے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف فور میں بھیجے گئے ایک وفد میں مذہبی رہنما بھی شامل تھے۔ اسرائیلی میڈیا نے دورہ کرنے والے رہنما کا نام بتاتے ہوئے دعویٰ کیا کہ نواز دور میں آئے وفد کی قیادت مولوی اجمل قادری نے کی اور اجمل قادری کی قیادت میں مذہبی رہنما اسرائیل آئے۔علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان کے معاون خصوصی ڈاکٹر شہباز گل نے بھی سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ اب مریم صفدر کو جواب دینا ہوگا کہ ان کے والد نے کس کس کو اسرائیل بھیجا؟ اور ان کی اسرائیل سے کیا ڈیل ہوئی ؟کیونکہ مریم نے خود ٹویٹ کر کے یہ مان لیا کہ ان کے والد نے اسرائیل میں اپنا نمائندہ بھیجا تو اب قوم جواب تو مانگے گی۔

Comments are closed.