ارینج نہیں محبت کی شادی کرنی چاہیے کیونکہ دونوں صورتوں میں ۔۔۔زرتاج گل کے بیان نے ہنگامہ برپا کر دیا

ارینج نہیں محبت کی شادی کرنی چاہیے کیونکہ دونوں صورتوں میں ۔۔۔زرتاج گل کے بیان نے ہنگامہ برپا کر دیا

وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل کا ایک انٹرویو سوشل میڈیا پر خو ب وائرل ہو رہا ہے جس میں انہوں نے شادی کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ ارینج نہیں بلکہ محبت کی شادی کرنی چاہیے ،دونوں صورتوں میں تباہ تو ہونا ہی ہے۔زرتاج گل سمجھتی ہیں کہ بہتر یہی ہے کہ انسان لو میرج کر کے تباہ ہو۔زرتاج گل نے مزید سوالوں کے دلچسپ جوابات دیتے ہوئے بتایا کہ کوئی بھی لیڈر منافق یا بزدل نہیں ہو سکتا اور انہیں فخر ہے کہ ان کا لیڈر بزدل اور منافق نہیں ہے، یہ عمران

خان کی عادت انہیں بہت پسند ہے۔میزبان نے ان سے پی ٹی آئی کے بعد دو بڑی سیاسی جماعتوں میں سے ایک چننے کو کہا گیا جس میں سے انہوں نے پی پی پی کو مسلم لیگ ن سے بہتر قرار دیا۔وزیر مملکت زرتاج گل نے اپنی پسندیدہ غذاکے بارے بتاتے ہوئے کہا کہ مجھے ابلا ہوا انڈہ، پشاوری چپلی کباب اور سبز چائے بہت پسند ہیں۔واضح رہے کہ زرتاج گل اکثر اپنے بیانات کی وجہ سے خبروں کی زینت بنتی رہتی ہیں، اس سے پہلے بھی زرتاج گل نے سوشل میڈیا پر اپنا مذاق بنوالیاتھا۔زرتاج گل کو یہ تک معلوم نہیں کہ 17 اگست 1988 کو ضیا الحق کی ایک طیارہ حادثہ میں موت ہوئی تھی اور زرتاج گل 17 اگست کو ضیا الحق کا یوم پیدائش سمجھتی رہیں۔نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئےزرتاج گل نے ن لیگی رہنما میاں جاوید لطیف کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ میں میاں جاوید لطیف کو مبارکباد دینا چاہتی ہوں ، آج ضیا الحق جس نے انکی پارٹی بنائی تھی۔ آج انکا یوم پیدائش ہے۔جس پرپروگرام کے میزبان ندیم ملک نے زرتاج گل کے سامنے ہاتھ جوڑدئیے اور کہا کہخدا کا نام لیں، آج 17 اگست ہے اور آج کے دن ضیا الحق کے طیارے کو حادثہ ہوا تھا اور انکی موت ہوئی تھی۔ندیم ملک نے تصحیح کی تو زرتاج گل نے کہا کہ پھر تو انہیں ضیا الحق کی شہادت کی برسی منانی چاہئے۔ندیم ملک کے شو کے دوران پیپلزپارٹی کے رہنما مرتضی وہاب نے زرتاج گل کے علم پر سر پکڑ لیا اور اپنی ہنسی چھپانے کی کوشش کرتے رہے۔

Comments are closed.